Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

30 سرکاری یونیورسٹیوں میں بے ضابطگیاں

لاہور(سید سجاد کاظمی سے )پنجاب کی30سرکاری یونیورسٹیوں میں تقررو ترقی میں بے ضابطگیوں کا انکشاف، ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ نے سرکاری یونیورسٹیوں سے ریکارڈ طلب کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق ہائر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پنجاب نے صوبہ کی30سے زائد سرکاری یونیورسٹیوں میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کی رپورٹ پر تقرریوں اور پرموشنز کے کیسز میں بے ضابطگیوں بارے تمام یونیورسٹیوں کو مراسلہ جاری کیا ہے جس میں آڈٹ ٹیموں کی رپورٹس اور دیگر ثبوتوں کے ساتھ یونیورسٹیوں سے پندرہ روز میں جواب طلب کیا گیا ہے اور حالیہ تقرر و ترقیوں کا حوالہ بھی دیا گیا ہے ۔ جاری مراسلہ میں 13سوالوں پر مبنی پروفارما جاری کیا گیا ہے جس میں یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرز سے سوال کیا گیا ہے کہ 15روز کے اندر سوالوں کا جواب دیا جائے ورنہ یونیورسٹیوں کے یہ کیسزچانسلر، گورنر پنجاب کو ریفر کردیئے جائیں گے ۔ تیرہ سوالوں میں ہاں یا نہیں ، میں ریمارکس بھی طلب کئے گئے ہیں جس کے مطابق پہلے سوال میں پوچھا گیا کہ کیا خالی سیٹوں پر پروموشنز کی گئی ہیں ، پروموشنز کرنے کا کیا کرائی ٹیریا ہے ، کیا یونیورسٹی کا کرائی ٹیریا یونیورسٹی ایکٹ یا چانسلر ایکٹ کے تحت ہے یا نہیں ، پروموشنز میں تعلیم، تجربہ اور کیڈر کا خیال رکھا گیا ہے یا نہیں ، ہائر سکیل میں پروموٹ کرنے کے لئے کیا کرائی ٹیریا ہے ، پروموشن سے قبل امیدوار کے سرٹیفکیٹ یا ڈگریاں چیک کی جاتی ہیں ، ترقیوں میں کوئی آڈٹ پیرا تو موجود نہیں ، کسی فرد کی انکوائری کے دوران پروموشن تو نہیں کی گئی ، پروموشن کے دوران تمام ریکوائرمنٹس مکمل تھیں، تمام پر وموشنز کی لسٹ چیک کرکے ارسال کی گئی ہے ، جتنی پروموشنز کی گئیں کیا ان کو کرائی ٹیریا کے مطابق مشتہر کیا گیا اور آخر میں پوچھا گیا ہے کہ یونیورسٹی کا خزانہ دار بھی چیک کرے کہ جتنی بھی تقرریاں وپر وموشنز کی گئی ہیں اس میں کرائی ٹیریا مکمل تھا یا نہیں۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More