Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

پنجاب میں 19 فیصد لڑکیاں کم عمری میں بیاہ دی جاتی ہیں ، سروے

اسلام آباد( حسیب حنیف) الیکشن برائے حقوق خواتین پنجاب کے حالیہ سروے میں انکشاف ہوا ہے کہ پنجاب میں چار فیصد بچیوں کی پندرہ سال سے کم عمر اور پندرہ فیصد بچیوں کی اٹھارہ سال سے کم عمر مین شادی کردی جاتی ہے ۔ آٹھ فیصد شادی شدہ خواتین کو جنسی ، 34 فیصد کو نفسیاتی ، 20 فیصد کو جسمانی اور22 فیصد کو جسمانی یا جنسی دونوں طرح کے تشدد کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ صرف تینف یصد خواتین ماسٹر ڈگری حاصل کر پاتی ہین پندرہ فیصد خواتین ایسی ہیں جو پرائمری تک ہی تعلیم حاصل کرپاتی ہیں ۔ ملک میں چوبیس فیصد نوجوان خواتین کسی بھی کام کے لیے اپنے میگنتر یا خاوند کے فیصلے کو مانتی ہیں ۔ کمیشن برائے حقوق خواتین پنجاب ادارہ شماریات پنجاب اوریو این پاپولیشن فنڈ کے تعاون سے ویمن اکنامک وسوشل سروے پر رپورٹ کا اجراء کردیا گیاہ ے سروے مین بتایا گیا کہ صوبہ پنجاب میں پندرہ سے 64 فیصد سال تک کی ہر تین میں ایک خاتونک و کسی نہ کسی قسم کے تشددکا سامنا ہے اٹھار سال سے کم عمری میں شادی کی شرح دیہی علاقوں میں ، سترہ فیصد اورشہروں میں گیارہ فیصد ہے اسی طرح پندرہ سال سے کم عمری میں شادی کی شرح دیہی علاقوں میں چارفیصد اور شہری علاقوں میں تین فیصد ہے ۔ رپورٹ کے مطابق پچیس سال یا اس سے زائد عمر کی صرف 0.2 فیصد خواتین ہی رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہو پائی ہیں 0.3 فیصد خواتین سیاسی جماعتوں میں آفس ہولڈرز ہیں اور0.4 خواتین نے انتخابات میں حصہ لیا ۔ پنجاب میں تیس سے چونسٹھ سال کی 66 فیصد خواتین کے لئے روزگار کے غیر محفو حالات ہیں۔ 84 فیصد خواتین کانان کنٹریکٹ روزگار ہے ۔ رپورٹ میں بتایا گیاہ ے کہ ملک میں چوبیس فیصد خواتین کسی بھی کام کے لیے اپنے خاوندیا منگیتر کے فیصلے کو مانتی ہیں۔ چونسٹھفیصد خواتین فیملی کی رائے اوردو فیصد اپنی رائے کو اہمیت دیتی ہیں ، تین فیصد اپنی اور دو فیصد خواتین اپنی فیملی جبکہ چھ فیصد خاوند اور اس کی فیملی کی رائے پر فیصلہ کو مانتی ہیں۔ سروے کے اجراء پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے چیئر پرسن کمیشن برائے حقوق خواتین پنجاب فوزیہ وقار نے کہا کہ خواتین پر یہ سروے دیگر صوبوں کے لیے بھی ماڈل ہو گا اس سروے کا مقصد پالیسی میکرز کو خواتین کے بارے میں آگاہکرنا اور خواتین کو امپاور کرنا ہے صحت ، تعلیم ، خواتین پر تشدد و دیگر ڈیٹا بھی سروے میں شامل ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More