Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

ماڈل کورٹس کی تعداد دوگنا کرنے کافیصلہ ، سول مقدمات کیلئے ججوں کے نام طلب

راولپنڈی(قیصر شیرازی) ملک بھر میں ماڈل کورٹس کے کامیاب تجربے کے بعد ماڈل کورٹس کی تعداد 116 سے بڑھا کر 232 کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ اور ان مزید ماڈل کورٹس کے لئے ججز کے نام بھی مانگ لئے گئے ہیں اس فیصلہ سے اب ملک بھر کیہر ضلع میں 2.2 ماڈل کورٹس بن جائیں گی ایک ماڈل کورٹس فوجداری اوردوسری ماڈل کورٹس سول کہلائے گی سول ماڈل کورٹس میں سینئر سول ججز بھی لئے جانے کاامکان ہے جن کا سول سائیڈ کا زیادہ تجربہ ہوگا ، ملک بھر میں سول عدالتوں میں فوجداری کی نسبت زیادہ اور پرانے مقدمات کا سونامی زیادہ ہے اس وقت سول عدالتوں
میں 1950 کے کیس بھی شامل ہیں۔ سول ماڈل کورٹس صرف فیملی اور رینٹ کے معاملات نمٹائیں گی ، پنجاب بھر کی فیملی عدالتوں میں روزانہ 9 سو سے 1 ہزار فیملی کیس دائر ہوتے ہیں دوسرے نمبر پر رینٹ ،کرایہ داری کیسز ہیں جبکہ فوجداری ماڈل کورٹس بدستور قتل اورمنشیات کیسوں کی ہی سماعت جاری رکھیں گی ۔ ماڈل کورٹس کی نگرانی ونگ کے ڈائریکٹر جنرل ڈسٹرکٹ ایند سیشن جج سہیل اصغر نے سول ماڈل کورٹس بنانے کی تصدیق کرتیہوئے بتایا کہ فوجداری 116 ماڈل کورٹس نے صرف دس روز میں 1464 مقدمات کے ریکارڈ فیصلے کیے ہیں اور 5814 گواہان کے بیان بھی ریکارد کئے ، چار اضلاع میں منشیات اور قتل کے مقدمات ہی ختم ہو گئے کچہری سروے کیمطابق آئندہ تین مال کے بعد ملک بھر میں قتل اور منشیات کے مقدمات کی تعداد میں 80 فیصد کمی آنے کا امکان ہے جبکہ چھ ماہ بعد قتل کے مقدمات کم فوجداری عدالتیں زیادہ ہوں گی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More