Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

سی ڈی اے کا غیر مجاز بورڈ، نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام کیلئے اربوں کی زمین مختص

اسلام آباد ( فخر درانی) اسلام آباد کی تاریخ میں پہلی بار حکومت مائو ایریا میں ہائوسنگ سکیم بنائے گی، سی ڈی اے بورڈ نے نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام کیلئے اربوں روپے کی زمین مختص کر دی ہے حالانکہ سی ڈی اے بورڈ کو اتنا بڑ اپالیسی فیصلہ کرنے کا اختیار نہیں ، کیوں کہ موجودہ بورڈ کی کمپوزیشن سی ڈی اے آرڈیننس اور اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے مطابق نہیں ۔ بورڈ نے منصوبے کیلئے زمین افتتاح سے ایک روز قبل مختص کی، وزیرا عظم نے نیا پاکستان پروگرام کا فتتاح 17اپریل کو کیا، اس سے ایک دن قبل بورڈ کا اجلاس بلایا گیا جس کا مقصد صرف ہائوسنگ منصوبے کیلئے زمین مختص کرنے کی منظوری دینا تھا۔ اسلا م آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کو نظر انداز کرنے کے ساتھ ساتھ بورڈ نے آئی سی ٹی کے ماسٹر پلان کی بھی خلاف ورزی کی اور دارالحکومت کے مائوو ایریا میں ہائوسنگ سکیم کی منظوری دے دی، مائو ایریا سرکاری دفاتر کیلئے مختص ہے، یہاں کوئی ایک رہائشی یونٹ نہیں ۔ چیئرمین سی ڈی اے کے مطابق سی ڈی اے آرڈیننس میں صرف تین ارکان کا ذکر ہے ،ممبر فنانس، ممبر ایڈمن اور چیئرمین بورڈ۔ بورڈ اجلاس کے منٹس کے مطابق اس اجلاس میں چھ حکام شریک ہوئے جن میں سے چار کے پاس ایکٹنگ چارج تھا،ممبر فنانس بھی موجود نہ تھے، اس نے یہ سوال اٹھا دیا ہے کہ ایکٹنگ چارج کے
حامل کی اکثریت پر مشتمل بورڈ کیا اتنا بڑا فیصلہ دے سکتا ہے، بورڈ کا فیصلہ سپریم کورٹ کے فیصلے کی بھی خلاف ورزی ہے، عدالت عظمیٰ نے کہا ہے کہ ایکٹنگ چارج کا حامل کوئی افسر بڑا پالیسی فیصلہ نہیں لے سکتا۔ یہاں یہ ذکر ضروری ہے کہ چیف کمشنر اسلام آباد کے پاس اس وقت سی ڈی اے چیئرمین کا ایڈیشنل چارج ہے، اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے کے تحت کسی بھی سرکاری افسر کو سی ڈی اے کا چیئرمین اور ممبر تعینات نہیں کیا جا سکتا، تا ہم گزشتہ حکومت نے اس فیصلے کو چیلنج کرنے کی بجائے سرکاری افسر کوچیئرمین اور ممبر سی ڈی اے تعینات کرنے کیلئے آرڈیننس میں ترمیم کر دی ۔اس کی شاہد خاقان عباسی کی زیر صدارت کابینہ نے منظوری دی مئی2018میں اس آرڈیننس میں تین ماہ کی توسیع کی گئی، ستمبر میں اس کی مدت ختم ہوئی ،اس کا مطلب ہے کہ اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ حتمی ہے۔ مائو ایریا میں سات ایکڑ کے علاوہ عسکری سکس میں بھی نیا پاکستان ہائوسنگ پروگرام کیلئے سی ڈی اے نے فیڈرل گورنمنٹ ایمپلائزہائوسنگ فائونڈیشن کو508کنال زمین الاٹ کر دی ہے، سی ڈی ا ے ذرائع کے مطابق یہ دونوں فیصلے غیر قانونی ہیں، سی ڈی اے بورڈ کے پاس اس کی منظوری دینے کا اختیار نہیں، چیف کمشنر اسلام آباد اور سی ڈے اے چیئرمین عامر احمد علی سے جب یہ سوال کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ سی ڈی اے بورڈ کے پاس یہ فیصلہ دینے کا مکمل اختیار ہے، ایڈیشنل چارج کا مطلب ایکٹنگ چارج نہیں، اسلام آباد ہائی کورٹ کا فیصلہ ایکٹنگ چارج کے بارے میں ہے،انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کے ماسٹر پلان میں کئی بار تبدیلی کی گئی اس کے لیے وفاقی کابینہ بااختیار اتھارٹی ہے، انہوں نے کہا کہ سی ڈی اے آرڈیننس میں تین ارکان کا ذکر ہےان میں ایڈمن، فنانس اور بورڈ چیئرمین شامل ہیں ، چیف کمشنر بائی ڈی فالٹ سی ڈی ا ے بورڈ کا ممبر ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More