Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

معیشت کے 6 اہم شعبوں  کی پیداوار منفی ، زرعی سیکٹر زیادہ متاثر

اسلام آباد(  ساجد چودھری   )  ملک میں معاشی   ترقی کے بیشتر اہداف حاصل  نہ ہونے سمیت معیشت   کے  چھ ا ہم شعبوں میں   پیداوار منفی اور    گزشتہ سال کے مقابلے میں   بھی نیچے گر  گئی ۔ سب سے زیادہ زرعی شعبہ متاثر ہوا جہاں پیداوار  بڑھنے کے بجائے    گزشتہ سال کی سطح   پر  ہی  منجمد ہو گی  ۔  رواں مالی سال   کے   دوران کپاس کی   پیداوار میں 17.5 فیصدکمی ہوئی جو 11496 ملین  گانٹھ سے کم ہو کر  9661  ملین گانٹھ تک آگئی  اسی طرح ٹیکسٹآئل کی صنعت    کی ضروریات پوری  کرنے کے لیے آئندہ مالی سال    کے دوران بھی 3 ارب  ڈآلر سے زائد مالیت     کی کپاس درآمد کرنا پڑے گی  گنے کی پیداوار   کم ہو نے سے چینی کی قیمتوں میں اضافے    کا  خدشہ ظاہر کیا گیا ہے    نیشنل اکائونٹس کمیٹی   میں زرعی شعبے   کی   زبوں حال  کے اعداد و شمار  کے مطابق زرعی شعبے میں   مجموعی ترقی  کی شرح    مقررہ ہدف3.8  فیصد کے مقابلے میں0.85    یا ایک فیصد سے بھی کم   رہی جس کی بنیادی وجہ    بڑی فصلوںکی پیدوار میں گزشتہ سال  کے مقابلے میں 6.55  فیصد کمی بتائی گئی ہے اعدادو شمار کے مطابق   کپاس کی پیداوار  میں 17.5 فیصد  کمی ہوئی ،چاولوں کی پیداوار میں  3.3فیصد کمی کے باعث  2901  ہزار میٹرک ٹن سے کم ہو کر 2810  ہزار میٹرک ٹن تک آگئی ۔   گنے کی پیداوار    19.4 فیصد   کمی کے  ساتھ  1343 ہزار  میٹرک ٹن سے کم ہو کر 1102    ہزار میٹرک ٹن تک اگئی ۔   اس کے علاوہ  دالوں  کی پیداوار میں 18.55فیصد   اضافے کے ساتھ   12387   ہزار میٹرک ٹن  سے  بڑھ کر 14694   ہزار میٹرک ٹن  تک پہنچ گئی ۔ گندم  کی پیداوار میں ایک فیصد  سے بھی کم اضافہ ہوا ہے   ۔ جو 25078   ہزار میٹرک ٹن سے  بڑھ کر 25195  ہزار میٹرک ٹن تک جا سکی ۔   سبزیوں کی پیداوار میں 0.41 فیصد   ، پھلوں کی پیداوار میں 0.08 فیصد ، آئل  سیڈ کی پیداوار    میں 5.02  فیصد   اضافہ جبکہ مویشیوں کے چارے    کی پیداوار    میں 1.38 فیصد   کمی واقع ہوئی ۔  بجلی  کی پیداوار میں   اضافے  اوردرآمدی   گیس کے باوجود صنعتی سرگرمیوں  میں بہتری نہ آسکی ۔صنعتی پیداوار میں   7.8 فیصد  کے  ہدف کے مقابلے مین  0.27 فیصد   مجموعی  کمی دیکھنے میں آئی۔ بڑے پیمانے  پر صنعتی  پیداوار میں 2.06  فیصد کمی ،   چھوٹے پیمانے پر   پیداوار  میں 8.20فیصد  اضافہ اور سلا٫ٹرنگ   ( ذبح خانوں)   کی سرگرمیوں میں 3.47 فیصد  اضافہ   ہوا ۔   گزشتہ دو سالوں کے دوران  بجلی اور گیس  کی پیداوار  اور ڈسٹری بیوشن   منفی  رہنے کے بعد ایک دہائی کے بعد پہلی بار 40.54 فیصد   بڑھی ہے تاہم 47 ذیلی صنعتوں   کی ترقی کا سبب بننے والی  تعمیرات کی صنعت  میں   ترقی کی شرح   گزشتہ سال کے   مقابلے میں 7.57 فیصد  گر گئی  ۔    خدمات کے شعبے میں    ترقی کی شرح 5.8 فیصد  ہدف کے مقابلے میں  4.71 فیصد   رہی ، سروسز سیکٹر  کے اندرونی ہول سیل اور ٹریڈ کے شعبے   میں  3.34 فیصد   ، فنانس اینڈ   انشورنش  کے شعبے میں 5.144 فیصد ، ہائوسنگ    کے شعبے میں 5.14 فیصد  ،ہائوسنگ     کے شعبے میں چار فیصد   ،جنرل  گورنمنٹ سروسز کے  شعبے مین   7.99 فیصد   اور پرائیویٹ سروسز   مین 7.05 فیصد   اافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More