Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

پیداوار میں کمی، محکمہ خوراک کیلئے گندم خریداری کا ہدف مشکل

لاہور(محمد نواز سنگرا)گندم کی پیداوار میں کمی کی وجہ سے محکمہ خوراک کے لئے 40لاکھ ٹن گند م خریداری ہدف پورا کرنا درد سر بن گیا۔صوبہ بھر کے خریدار ی مراکز پر باردانہ وصول کرنے والے کاشتکاروں کی تعداد انتہائی کم ہے ۔ہدف کے حصول کے لئے فیلڈ افسران کو سخت ہدایات جاری کر دی گئیں۔ پیداوار کم ہونے کی وجہ سے آڑھتی اور ملز مالکان نے سرکاری نرخوں سے زائد پر گندم خریدنا شروع کر دی۔ بارشوں کی وجہ سے گندم کی فصل شدید متاثر اورپنجاب میں پیداوار انتہائی کم ہوئی ہے ۔ چھوٹا کاشتکار محض گھریلو ضروریات کی گندم ہی پیدا کر سکا اوراس سے گندم فروخت ہی نہیں کی ۔دوسری جانب گندم کی پیدوار کم ہونے کی وجہ سے فلو ملزز نے بھی سرکاری نرخوں یا اس سے زائد پر گندم خریدنا شروع کر دی اور موقع پر کسانوں کو ادائیگی بھی شروع کر دی ہے جس کے پیش نظر کسان نے کم پیداوار کی وجہ سے جو معمولی گندم بیچنی ہے وہ سرکاری کے لمبے طریقہ کار سے بچنے کے لئے اس نے اپنے قریبی آڑھتی کو فروخت کرنا شروع کر دی وجہ سے محکمہ خوراک کے لئے 40لاکھ ٹن گندم کی خریداری کا ہدف کا حصول انتہائی مشکل ہو گیا ہے ۔رواں مالی کے لئے گندم کا پیدوار ہدف ایک کروڑ 95لاکھ ٹن مقرر کیا گیا ہے مگر بارشوں کی وجہ سے 30سے 40لاکھ ٹن پیدوار میں کمی کا خدشہ ہے ۔جہاں پنجاب حکومت نے خریداری ہدف 40لاکھ ٹن مقرر کیا ہوا ہے وہاں پاسکونے بھی ملک بھر میں 11لاکھ ٹن گندم خریداری کرنی ہے ۔دوسری جانب پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن حکام نے کہنا ہے کہ محکمہ خوراک کے فیلڈ عملہ نے ان کی گندم پکڑنا شروع کر دی اور راستے میں ہی ان کے ٹرک آف لوڈ کر لیے جاتے ہیں ۔فلور ملز ایسوسی ایشن اس حوالے سے حکومت کو وارننگ بھی جاری کر چکی ہے کہ اگر حکومت ایسے اقدامات سے باز نہ آئی تو وہ اگلا لائحہ عمل دیں گے ۔جبکہ محکمہ فوڈ حکام نے اس بات کی تردید کی کہ فلور ملز کی گندم کے ٹرکوں کو آف لوڈ نہیں کیا جا رہا ۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More