Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

2موبائل فون کمپنیوں کی پرانی فیس پرلائسنس تجدید کی درخواست مسترد 900ملین ڈالر وصولی کی ہدایت

اسلام آباد(سہیل اقبال بھٹی)وفاقی حکومت نے 2موبائل فون کمپنیوں کے لائسنس کی پرانی فیس پر آئندہ 15 سال کیلئے تجدید کی درخواست مسترد کردی ہے اور دونوں موبائل فون کمپنیوں سے 900ملین ڈالر فیس وصول کرنے کی ہدایت جاری کردی ہے ۔ وزیراعظم کی مداخلت کے نتیجے میں قومی خزانے کو67ارب روپے کے نقصان سے بچا لیا گیا ہے ۔2 کمپنیوں نے 582ملین ڈالر فیس کے عوض آئندہ 15سال کیلئے لائسنس تجدید کروانے کامطالبہ کیا۔2موبائل فون کمپنیوں کے 15سالہ لائسنس کی میعاد 25مئی کو ختم ہوجا ئیگی جبکہ تیسری کمپنی کے لائسنس کی بھی نومبر 2019میں 450ملین ڈالر کے عوض تجدید ہوگی۔مسلم لیگ ن کی حکومت کے مقابلے میں موبائل فون کمپنیوں کی بھرپور لابنگ کے باوجود 477ملین ڈالر اضافی فیس وصول کی جا ئیگی۔92 نیوز کو موصول سرکاری دستاویز کے مطابق وفاقی حکومت نے موبائل فون کمپنیوں کے لائسنسوں کی تجدید کیلئے پی ٹی اے کو فیس کا تعین کردیا ہے ۔مسلم لیگ ن کی تیارکردہ ٹیلیکام پالیسی کا بغور جائزہ لیاگیا جس میں تجدید فیس پر پالیسی مبہم رکھی گئی تھی ۔ 2014ئمیں موبائل فون کمپنیوں کے صارفین کی تعداد اور ریونیو کم تھا۔موبائل کمپنیز کے لائسنس کی تجدید کیلئے کابینہ کی کمیٹی کا 3مئی 2019 ئکو اجلاس ہوا جس میں پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن ایکٹ 1996ئکے سیکشن 8کے تحت پالیسی ہدایات جاری کرنے کی سمری پر غور کیا گیا۔رولز آف بزنس 1973ئکے رول 17(1)(c) اور پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن ایکٹ 1996 ئکے سیکشن 8 کے تحت وفاقی کابینہ کو سفارشات ارسال کی گئیں جس کے تحت وفاقی حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ فریکونسی سپیکٹرم کے استعما ل کیلئے نئی قیمت 2016اور2017کے فریکونسی سپیکٹرم کی نیلامی کے وقت مقرر کی جانے والی فی میگا ہرٹز کے مطابق ہو نی چاہیے جیسا کہ 900میگا ہرٹز کے فریکونسی سپیکٹرم کی فی میگا ہرٹز کی قیمت 39.5ملین امریکی ڈالر اور 1800میگا ہزٹز کے فریکونسی سپیکٹرم کی فی میگا ہرٹز کی قیمت29.5ملین امریکی ڈالر تھی۔تجدیدی لائسنس کی معیاد 15سال تک ہو گی۔ادائیگی کی شرائط کے تحت 100فیصد ادائیگی یا 50فیصد فوری او ر بقیہ 50 فیصد ادائیگی50 سالانہ اقساط اور KIBOR+3%کے تحت کی جائینگی۔فیس کی ادائیگی امریکی ڈالر کے ساتھ ساتھ پاکستانی روپوں میں بھی کی جا سکے گی،جس کا تعین ادائیگی کے وقت مارکیٹ ایکسچینج ریٹ کے تحت کیا جا ئیگا۔اس پالیسی ہدایات کے مطابق لائسنس کی تجدید موجودہ حکومت کی پالیسیز کے مطابق ہونگی۔منظور شدہ ریگولیٹری فریم ورک کے مطابق سپیکٹرم ٹریڈنگ اور شیئرنگ کی فراہمی پی ٹی اے کی جانب سے تجدید شدہ لائسنس میں شامل ہو گی۔کوریج اور کوالٹی سے متعلق شرائط و ضوابط تجدید شدہ لائسنس میں پی ٹی اے کی جانب سے شامل کئے جا ئینگے جو کہ ٹیلی کام پالیسی 2015 ئکے عین مطابق ہونگی۔تجدید شدہ لائسنس کی 100فیصد یا 50فیصد ادائیگی 25جون 2019ئتک کی جا سکے گی۔اگر مقررہ تاریخ تک سپیکٹرم کو استعمال کیا جا چکا اور ادائیگی نہ کی گئی تو مقررہ مدت کے تناسب سے رقم وصول کی جا ئیگی۔اگر رقم نہ دی گئی تو ایکٹ،رولز اور پالیسی کے تحت قانونی کارروائی کی جا سکتی ہے ۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More