Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

پن بجلی منافع کی رقم صارفین سے وصول نہ کرنے کی درخواست

اسلام آباد(سہیل اقبال بھٹی)وفاقی حکومت نے ڈالر کی قدرمیں اضافے ،کمزور معاشی صورتحال،آئی ایم ایف کی کڑی شرائط اور مہنگائی میں مسلسل اضافے کے باعث بجلی کے صارفین کوبھاری بوجھ سے بچانے کیلئے غیرمعمولی قدم اٹھالیا ۔ پاور ڈویژن نے نیپرا سے خیبرپختونخوا ، پنجاب اور آزاد کشمیر کو خالص پن بجلی منافع کی مد میں 146ارب روپے ادا کرنے کیلئے بجلی صارفین سے وصولی روکنے کی درخواست کردی ۔ مسلم لیگ ن کی حکومت نے 2016میں مشترکہ مفادات کونسل سے کئی سال سے زیرالتوائخالص پن بجلی منافع کی صوبوں کو ادائیگی کیلئے بجلی صارفین پر بوجھ ڈالنے کی منظوری حاصل کی تھی ۔آئی ایم ایف معاہدے کے باعث وفاقی حکومت اضافی سبسڈی نہیں دے سکتی۔92نیو زکوموصول سرکاری دستاویزات کے مطابق حالیہ معاشی حالات کے باعث بجلی صارفین پر بوجھ کم کرنے کیلئے حکومت نے فیصلہ کیا ہے کہ خالص پن بجلی منافع کی مد میں واجب الوصول رقم کی وصولی وقتی طور پر روک دی جائے ۔ اس رقم کو بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے متعین کردہ نرخوں میں شامل کر دیا جائے ۔ اس اقدام سے صارفین کیلئے اضافی نرخ کا بوجھ کم اورریلیف فراہم کیا جا سکے گا۔ حکومت کے اس اقدام پر نیپرا نے ایک اجلاس میں موقف اختیار کیا کہ خالص پن بجلی منافع کی رقم پہلے ہی واپڈا اور کے الیکٹرک کے متعین کردہ ٹیرف میں شامل کی جانے کی اجازت دی جا چکی ہے ،رقم بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے اکائونٹس سے نکالنے سے قانونی مسائل کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے جس کے جواب میں پاورڈویژن نے نیپرا سے استدعاکی کہ صارفین سے خالص پن بجلی منافع کی رقم کی عدم وصولی کی وجہ سے واپڈا اور کے الیکٹرک کے نرخوں میں تبدیلی کی ضرورت نہیں ۔ واپڈا کے تناظر میں نیٹ ہائیڈل پرافٹ کی رقم پاس تھرو آئٹم ہے ،کچھ وقت کیلئے سی پی پی اے کی جانب سے مختصر رقم کی ادائیگی پہلی مدت کی ادائیگی کے مطابق ترتیب دی جا سکتی ہے ۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More