Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

اسحاق ڈاراثاثہ جات ، ایف بی آر نے مکمل ریکارڈ نہیں دیا ،واجد ضیا

اسلام آباد( نامہ نگار) سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے جات ریفرنس میں ملزمان نعیم محمود اورمنصوررضا رضوی کے وکیل قاضی مصباح نے مرکزی گواہ واجد ضیاء پر جرح کی ،واجد ضیاء سے پوچھا گیا کہ کیا جے آئی ٹی نے ماہر معاشیات سے مدد لی تھی واجد ضیاء نے بتایا یہ درست ہے کہ ماہر معاشیات سے مدد لی تھی ۔ سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے کی ۔ ملزمان کے وکیل نے پوچھا کیا ایف بی آر نے کمل ریکارڈ جے آئی ٹی کو فراہم کیا تھا واجد ضیاء نے بتایا کہ ایف بی آر نے مکمل ریکارڈ فراہم نہیں کیا گیا 1981 سے 1985 تک کا ریکارڈ فراہم نہیں کیا گیا ۔ وکیل نے کہا کیا آپ کے علم میں ہے اسحاق ڈار کی ہجویری فائونڈیشن 90 یتیم بچوں کی کفالت کررہی ہے ؟ واجد ضیاء نے کہا مجھے یاد نہین کہ بچوںکی کفالت کی جاتی تھی یا کتنے بچے تھے۔ وکیل صفائی نے کہا کہ آپ کو یاد نہیں توہم آپ کو یاد دلادیتے ہیں آپ کی سپریم کورٹ مں جمع کرائی گئی رپورٹ میں لکھا ہے ہجویری ٹرسٹ اورفائونڈیشن فلاحی ادارے ہیں۔ واجد ضیاء نے کہا جے آئی ٹی نے ہجویری فائونڈیشن کے کسی ایسے پراجیکٹ کی تفصیلات حاصل نہں کیں نیب پراسیکیوٹر افضل قریشی نے اعتراض کیا کیا اشتہاری شخص سے متعلق جرح نہں ہو سکتی۔ واجد ضیاء نے بتایایہ درست ہے کہ اسحاق ڈار نے جے آئی ٹی کے سامنے بیان دیا تھا اور اسحاق ڈار نے 1999 ء میں آئی ایس آئی اور نیب نے ان کا ٹیکس ریکارڈ قبضہ میں لیا لیکن ہم نے اس بیان کی کہیں سے تصدیق نہین کی ۔ بعدازاں سمیاعت 29 مئی تک ملتوی کردی گی

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More