Pak Updates - پاک اپڈیٹس
پاکستان، سیاست، کھیل، بزنس، تفریح، تعلیم، صحت، طرز زندگی ... کے بارے میں تازہ ترین خبریں

غیر ملکی دوروں اور نئی گاڑیوں پر پابندی جاری رکھی جائے گی

اسلام آباد( عترت جعفری ) وفاقی کابینہ نے بجٹ کی حکمت عملی کے پیپر کی منظوری دی ہے جس کے تحت امراء پر ٹیکس کی شرح بڑھانے ، سگریٹ ، اور دوسرے درآمدی سامان تعیش پراپرٹی اور ریگولیٹری ڈیوٹیز کی شرحیں بڑھائی جائیںگی غیر ملکی دوروں اور نئی گاڑیوں پر پابندی جاری رکھی جائے گی کالا دھن رکھنے والوں کے خلاف ایکشن لیاجائے گا سرکاری خرچ پر خوش خوراکی نہیں ہوگی ۔ ذرائع نے بتایاہے کہ مشیرخزانہ نے تفصیل سے کابینہ کو حکمت عملی کے بارے مین بتایا اور کہا ایف بی آر کو 5550 ارب روپے کا ریونیو ٹارگٹ دیا گیا ہے اس کے مطابق ہی اقدامات ہوں گے تاکہ آئندہ اس کے حصول کو یقینی بنایا جاسکے ۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ آئندہ وفاقی بجٹ معاشرے کے پسماندہ اور غریب طبقات کی فلاح و بہبود پر بھرپور توجہ دی جائے گی اس ضمن میں احساس پروگرام کیلیے مختص رقم سو ارب روپے سے بڑھا کر ایک سو اسی ارب روپے کردی گئی ہے 85 فیصد بجلی کے چھوٹے صارفین اور چالیس فیصد چھوٹے گیس صارفین کے لیے بجلی اور گیس کی قیمتوں میں اضافہ نہں کیا جائے گا اور انہین آئندہ مالی سال سبسڈی دی جائے گی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں کو مناسب سطح پر رکھنے کے لیے بوقت ضرور ت ٹیکس اور لیوی میں ایڈجسٹمنٹ کی جائیگی اجلاس مین بیرونی ادائیگیوں کے توازن کو درست کرنے کے لیے ملک میں درآمدات کی حوصلہ شکنی کی جائے گی اورغیر ضروری درآمدات کی حوصلہ شکنی کیل یے ان پر اضافہ ڈیوٹی اور ریگولیٹری ڈیوٹیوں میں اضافہ کیا جائے اور ان کی نجی شعبے میں درآمدات کی حوصلہ شکنی کے لیے ان کے لیی زرمبادلہ میں کیش مارج کی شرح بڑھانے کی پالیسی اپنائی جائے گی ۔ وفاقی اور صوبائی سطح پر حکومت کاری کو کفایت شعار بنایا جائے گا اور بجٹ کفایت شعاری کی پالیسی کے تحت بنائے جائیں گے ہر سطح پر اخراجات مین کمی لائے گی خصوصا کرپشن اور بلا ضرورت اشیاء کی خریداریوں پر ضائع کیے جانے والے قومی پیسہ کی بچت کیلیے ہر وزارت کا سالانہ پروکیورمنٹ پلان وزارت خزانہ کے فنانشنل ایڈوائزر کی نگرانی میں کڑی نگران میں تیار کروایا جائے گاریونیو مین اضافہ کیلیے پانچ کروڑ پچاس لاکھ کاروباری اکائونٹس کی جانچ پڑتال اور ، ہر وزار ت کے اندر نئی آسامیاں قائم کرنے پر پابندی ہوگی اورپہلے سے موجود خالی آسامیوں کو سرپلس پول میں موجودفارغ ملازمین سے پورا کیا جائے گا اور اگر کسی شعبہ کے لیے بھرتیاں ا ہم ہیں توا سکی منطوری کابینہ سے لی جائے گی تمام وزارتوں اور ڈویژنوں میں نئی گاڑیوں خریدنے پر پابندی ہوگی تاہم قانون نافذ کرنے والے ادارے اور میگا پراجیکٹس پر کام کرنے والے حکام اور انجنیئروں کے لیے گاڑیاں خریدی جا سکیںگی سرکاری خرچ پر لنچ اور ڈنر کی بڑی ضیافتو ںپر پابندی ہوگی۔

Get real time updates directly on you device, subscribe now.

Comments
Loading...

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept Read More